Kashif Hafeez Siddiqui

ہم لوگ اقراری مجرم ہیں

In pakistan on August 17, 2009 at 11:21 am

 

 “A beautiful Nazam by “Naeem Siddiqui”

ہم لوگ اقراری مجرم ہیں

Syed Qutubہم لوگ اقراری مجرم ہیں                سن اے جباری! مجرم ہیں!

حق گوئی بھی ہے جرم کوئی              تو پھر ہم بھاری مجرم ہیں!

روپوش نہیں،مفرور نہیں!

                        پھر ہم کو جواب دعویٰ میں

                                                کچھ کہنا بھی منظور نہیں!

تعزیر کو ہم خود حاضر ہیں!                         ہم لوگ اقراری مجرم ہیں!

ہم لوگ اقراری مجرم ہیں

nasirKamalتن من کو نہ منڈی میں بیچا!             ہم پیٹ پجاری بن نہ سکے

جو لوگ خدا کے باغی ہیں              ہم ان کے حواری بن نہ سکے

اغراض کی مہرہ بازی میں

                        بن کھیلے داؤ ہار چکے!

                                                کورے ہیں زمانہ سازی میں!

ذلت کے گھر کی چوکھٹ پر             عزت کے بھکاری بن نہ سکے

ہم لوگ اقراری مجرم ہیں                 

Hassan al binaسن ہم سے دور طاغوتی!                 طاغوتوں سے بیزار ہیں ہم

جب نگری اندھی نگری ہے              تو اے راجہ! غدار ہیں ہم

ہم سرکش ہیں، ہم طاغی ہیں

                        انگریز کے ترکے میں جوملا

                                                اس مذہب کے ہم باغی ہیں

اس جرم پہ جو دی جائے سزا                       سہنے کے لیے تیار ہیں ہم

ہم لوگ اقراری مجرم ہیں                 

Maududiچمگادڑ جس سے چڑتے ہیں!                        اس صبح کا اک آغاز ہیں ہم

اندھیارے جس کے دشمن ہیں                       اس سورج کا اک راز ہیں ہم

اک آفت ہیں، اک قہر ہیں ہم!             

                        اے قبر ماضی کے مردو!

                                                مستقبل کی اک لہر ہیں ہم!
            محکومی کی اولاد ہو تم!                               آزادی کی آواز ہیں ہم!

ہم لوگ اقراری مجرم ہیں

Yaseenہے یہ وہ مقدس جرم ، جسے                        خود نبیوں﴿ع﴾نے ایجاد کیا

انسانوں کو انسانوں کے                              ہر بندھن سے آزاد کیا

اشرار انہیں ٹھکراتے تھے

                        لیکن وہ دار کے اوپر بھی!

                                                الہام کے نغمے گاتے تھے

جو درس خودی وہ دے کے گئے                    اس درس کو ہم نے یا دکیا!

ہم لوگ اقراری مجرم ہیں

Hizbullahباطل کے سیاست بازو! ہم               ہر باطل سے ٹکرائیں گے

ہر جھوٹ پہ دھاوا بولیں گے              ہر فتنے سے لڑجائیں گے

تخریب وطن کیوں ہونے دیں؟

                        بازار میں کھوٹے سکوں کا!

                                                یوں عام چلن کیوں ہونے دیں؟

ہر کفر کا رستہ روکیں گے!             ہر ظلم کے آڑے آئیں گے!

ہم لوگ اقراری مجرم ہیں

Yaseen Rantiseeجس ٹھاٹھ سے تم مغرور ہوئے            اس ٹھاٹھ سے ہم مرغوب نہیں

“آقائے ولی نعمت”سے                   “رحمت کی نگہ “مطلوب نہیں

خوشنودی کے گاہک بھی نہیں

                        پھر تھے جو شامد کے مفلس

                                                جیبوں میں کوڑی تک بھی نہیں

جباروں کے درباروں سے               صد شکر کہ ہم منسوب نہیں!

ہم لوگ اقراری مجرم ہیں

Munib ur rehmanقرآن کی روح مضطر کا!                             بیباک سا اک اظہار ہیں ہم

مظلومی دیں کی چیخ ہیں ہم              افسوس کہ دل آزار ہیں ہم

کعبے کی آہ سوزاں ہیں!

                        تاریخ کے دل کی ٹیس ہیں ہم

                                                ملت کے دل کا ارماں ہیں!

کچھ کڑوی باتیں کہتے ہیں!             گستاخ ہیں، ناہنجار ہیں ہم

ہم لوگ اقراری مجرم ہیں

Taqiاسلام سے امن عامہ، میں!              آتا ہے خلل تو یوں ہی سہی

قانون کے ماتھے پر کوئی!              پڑتا ہے جو بل تو یوں ہی سہی

کچھ آنکھیں اگلیں آگ تو کیا!

                        کچھ چہرے لال ہوئے تو ہوں

                                                کچھ ہونٹوں پر ہے جھاگ تو کیا؟

دنیا میں اگر نیکی کا شجر                   رہتا ہے اپھل تو یوں ہی سہی!

ہم لوگ اقراری مجرم ہیں

Tariq jamilاسلام کو جب تم چر کے دو              تو دیں ہم داد؟ یہ ناممکن !

حضرت کی کافر کیشی پر                 ہم کردیں صاد؟ یہ ناممکن!

کیا مہر بہ چشم و گوش رہیں

                        کیا صم بکم ہوجائیں

                                                ہر منکر پر خاموش رہیں؟

ہم گھو میں آپ کے پیچھے کیا                      “فی کل واد؟”یہ ناممکن ؟

ہم لوگ اقراری مجرم ہیں

اMusharafںصاف کی کرسی پر ظالم               پہلے بھی قابض پائے گئے

پیشی میں ان کی اہل حق                 الزام لگاکر لائے گئے

جو خونی تھے سرکار بنے

                        تاریخ کے یہ اعجوبے ہیں

                                                جو محسن تھے، غدار بنے

کچھ ہم پہ نرالا ظلم نہیں                             پہلے بھی کرم فرمائے گئے

ہم لوگ اقراری مجرم ہیں

Israrآقاؤں پر تنقید کریں                                    توکیا یہ سنگیں جرم نہیں؟

مکاری کی تردید کریں                                 تو کیا یہ سنگین جرم نہیں؟

اعمال کے دفتر کھولے کیوں؟

                        انصاف کے کانٹے پر آخر

                                                خدمات، کو کوئی تولے کیوں؟

تبدیلی کی تمہید کریں                          تو کیا یہ سنگین جرم نہیں؟

ہم لوگ اقراری مجرم ہیں

afiaسچائی کا چیلنج ہیں ہم!                     اب وقت ہے کچھ تدبیر کرو

سرکار کے فتوی بازو ! تم                حق بازوں کی تکفیر کرو

قانون ہے آرا میدہ کیوں؟

                        زنجیروں میں تحریک نہیں

                                                ہر حلقہ ہے خوابیدہ کیوں؟

جذبہ نہ جنوں بن جائے کہیں                       سامان دارو گیر کرو!

ہم لوگ اقراری مجرم ہیں

Muslimsہم لوگ اقراری مجرم ہیں!                 پر، جرم و خطا کچھ اور ہی ہے

یاں پھانسی بھی ہے، جیل بھی ہے    پر اس کی سزا کچھ اور ہی ہے

کیا قتل کیا؟ کیا چوری کی؟

                        یا کوئی ڈاکہ ڈالا ہے؟

                                                آخر کیا سینہ زوری کی؟

کچھ ایسا ویسا جرم نہیں                             یہ نام خدا کچھ اور ہی ہے!

ہم لوگ اقراری مجرم ہیں

Islamاب آخر اس کو کیا کیجے؟                          یہ ذوق جرم نرالا ہے!

یہ ذوق، تشدد کیجے تو                               کچھ اور ابھرنے والا ہے؟

تعزیر اسے بھڑکاتی ہے!

                        جتنی بھی سزادی جاتی ہے

                                                وہ جوش نیا پھیلاتی ہے!

اس جرم کو اک اک مجرم نے             سینے میں پیہم پالا ہے!

ہم لوگ اقراری مجرم ہیں

ہم لوگ اقراری مجرم ہیں

  ہم لوگ اقراری مجرم ہیں

Advertisements
  1. mashaAllah jazakAllah…..
    you reminded me my student life.after such a along time i heard it again…..
    thanks a lot

  2. Wonderful poem!

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

%d bloggers like this: