Kashif Hafeez Siddiqui

نقیب کے نقیب

In Urdu Columns on January 18, 2018 at 3:31 pm

قدرت ظالم یقینا نہیں ۔۔۔۔۔۔۔۔ اسی لئیے آخرت موجود ہے ۔۔۔۔۔۔ سارا حساب کتاب وہاں بے باک ہو گا ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ کوئ سفارش ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔کوئ کرسی ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔کوئ طاقت ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔کوئ ایجنسی کام نہیں آئے گی ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔بس اللہ کا قانون ہو گا ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ اور انصاف ہو گا ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ جو کہ شفاف اور بے رحم ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ وہاں ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ نقیب اللہ محسود ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ قاتلوں سے سوال پوچھے گا ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ مجھے کس جرم میں قتل کیا گیا ؟ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ صرف نقیب ہی نہیں ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ہاتھ پاوں بندھے ہوئے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ پشت پہ گولیاں کھانے والے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ جعلی پولیس مقابلوں میں مارے جانے والے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ راہ چلتے اغوا ہوکر قتل ہو جانے والے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ سب مظلوم اللہ کے حضور مدعی ہوں گے۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ اس روز ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ خوش اور نازاں ہوں گے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔اور سب ظالموں کی ناک خاک آلود ہو گی ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ انشااللہ

سی ٹی ڈی کے اہلکاروں نے چپل گارڈن گل شیر آغا ہوٹل سے خوبصورت جواں سال، تین بچوں کے والد نقیب محسود کو اغوا کیا تھا. پولیس نےمقدمہ درج کرنے سےبھی انکار کیا تھا. نقیب کے تین بچے ہیں . جن میں نو سالہ نائلہ , سات سالہ علینہ اور دو سال کا بیٹا عاطف شامل ہیں. نقیب سہراب گوٹھ میں مقیم تھا .
نقیب محسود کے چاچازاد رحمان محسود نے “دی نیوز” کے رپورٹر دوست کو بتایا کہ نقیب محسود کسی بھی دہشتگرد کارروائی میں ملوث نہیں تھا. آپریشن راہ نجات کے بعد نقیب اپنے آبائی علاقے جنوبی وزیرستان کے تحصیل مکین گاؤں رزمک سے خاندان سمیت کراچی مستقل منتقل ہوا تھا

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

w

Connecting to %s

%d bloggers like this: